ایرانی القدس کے بدنام زمانہ دھشتگر پاسدار مدتوں سے بلوچ نوجوانوں کے قتل میں مصروف ھیں

MUST READ

از شیخ خزعل تا شهید احمد نیسی

از شیخ خزعل تا شهید احمد نیسی

بلوچ باید انت وتی زمین ءُ ڈگارءِ مستر وت بہ بیت۔ عبداللہ بلوچ

بلوچ باید انت وتی زمین ءُ ڈگارءِ مستر وت بہ بیت۔ عبداللہ بلوچ

ملت پارس به آفت نژاد پرستی مبتلاست

ملت پارس به آفت نژاد پرستی مبتلاست

تربت: فورسز نے محاصرہ شدہ مکان سے خاتون کو دو بچوں سمیت نامعلوم مقام پہ منتقل کر دیا

تربت: فورسز نے محاصرہ شدہ مکان سے خاتون کو دو بچوں سمیت نامعلوم مقام پہ منتقل کر دیا

روز شهــدای بلوچستـان گرامـی باد

روز شهــدای بلوچستـان گرامـی باد

FRIENDS OF MY NATION

FRIENDS OF MY NATION

واجہ شھید پروفیسر صبا دشیاريءِ 26 اگست 2009ءَ بلوچستان لیبریش چارٹر ءُ آھيءِ رھدربريءِ بابتءَ تران

واجہ شھید پروفیسر صبا دشیاريءِ 26 اگست 2009ءَ بلوچستان لیبریش چارٹر ءُ آھيءِ رھدربريءِ بابتءَ تران

اپوزیسیون مرکزگرای پارس چه در سر دارد؟

اپوزیسیون مرکزگرای پارس چه در سر دارد؟

منی غیر بلوچیں معلمءَ منا هر وهد توهین کت ءُ جہل جت و کوشیشت کرت کہ من وانگءَ هلاس به کنان . سامان ریگی

منی غیر بلوچیں معلمءَ منا هر وهد توهین کت ءُ جہل جت و کوشیشت کرت کہ من وانگءَ هلاس به کنان . سامان ریگی

بلوچستان ءِ پلین شهیدان ءَ هزاران سلام

بلوچستان ءِ پلین شهیدان ءَ هزاران سلام

جنگی مجرم مشرف ءِ رسوایی

جنگی مجرم مشرف ءِ رسوایی

مروچی زرینہ مری ءُ مراد مریءَ پرین 3138 روچ انت کہ بیگواہ انت

مروچی زرینہ مری ءُ مراد مریءَ پرین 3138 روچ انت کہ بیگواہ انت

طرح تقسیم بلوچستان خیانتی است بزرگ به ملت بلوچ

طرح تقسیم بلوچستان خیانتی است بزرگ به ملت بلوچ

جئے سندھ متحدہ محاذ کے کارکن شهید سرویچ پیرزادہ کے والد لطف علی سے گفتگو

جئے سندھ متحدہ محاذ کے کارکن شهید سرویچ پیرزادہ کے والد لطف علی سے گفتگو

فاجعه آفرینی باندهای تبهکارزابلی در بلوچستـــان اشغالی

فاجعه آفرینی باندهای تبهکارزابلی در بلوچستـــان اشغالی

ایرانی القدس کے بدنام زمانہ دھشتگر پاسدار مدتوں سے بلوچ نوجوانوں کے قتل میں مصروف ھیں

2021-02-26 18:52:24
Share on

ایرانی القدس پاسدران کو ملّا خامنئی کی جانب سے بلوچستان کے سرحدی علاقوں کی دفاعی ذمہ داری ۲۰۱۵ سے سونپی گئی ھے، ان کو بلوچستان میں بلوچوں کو ھر نظر سے گریبان گیر کرنے کی کھلی چھوٹ دیگئی ھے انکے فرائضوں میں بلوچوں کے آجدادی زمینوں پر قبضے ،ساحلی علاقوں میں نئے شھر بسانے جس میں آبادکار گجر کو کئی میلونوں کے حساب سے آباد کرانا تاکہ بلوچوں کے انکے گلزمین میں اقلیت میں تبدیل کیا جائے، بلوچوں کے تمام ساحلی علاقوں کو قبضہ کرنا اور انھیں اپنے عزیز سوآقابروں کے نام لیز کرنا، معاشی بدحالی اور تمام سرکاری دفاتروں میں آباد کروں کو نوکری دینا  اور نجی کمپنیوں کو آبادکاروںکے نام الاٹ کرنا اور انھیں معاشی گارنٹی دینا، منشیات کو بلوچ علاقوں میں پھیلانا اور روزگار کے تمام ذرائعوں کو بلوچ نوجوانوں کے لئے بند کرنا، بلوچ نوجوانوں اور معتمدوں اپنے مخبر بنانا تاکہ اپنے مادر وطن کی بدحالی اور قبضہ گیریت میں معاونت کریں.
بلوچستان میں قبائلیوں کے درمیان اسلحہ کی مفت تقسیم تاکہ بلوچ قبائل ایک دوسرے سے چپقلش اور برادر کشی کرتےرھے. خامنئی کے بدنام زمانہ پاسدارن عرصوں سے بلوچوں کے قتل عام میں ملوث رھے ھیں تاکہ بلوچوں کی نسل کشی کیجاسکے اور بلوچ نوجوانوں کے قتل کوئی بھی حکومتی ادارہ جواب گو نھیں ھوتا. جس تصویر کو آپ مشاہدہ کڑھے وہ انھی بدنام زمانہ پاسداران کی بلوچوں کے خلاف سفاکیت کی نشاندھی ھے. یہ پاسداران ان سرحدی علاقوں میں تعینات جھاں بلوچ 
دو وقت روٹی پیدا کرنے کے تیل کا کاروبار کرتے ھیں یہ سفاک انھیں گولیاں کا نشانہ بنا کر انھیں جانوروں کی طرح گاڑیوں میں ڈال کر ویرانوں میں پھینک دیتے تاکہ یہ قاتل مبرا ھوسکے. اس تصویر میں پاسداروں نے چند بلوچ کو موت کے گھاٹ اتار کر انکی جسدوں کو ویرانوں میں پھینکے سے پہلے تصویر کننھچی اور اس نے اسے اپنے انسٹاگرام میں پوسٹ کرکے اپنے بربریت پر نازاں ھے، کیونکہ انھیں بلوچوں کے قتل عام کی جمھوری اسلامی ایران کی طرف سے کھلی چھوٹ ھے.

Share on
Previous article

زاھدان میں سراوان کے بلوچ قتل عام کے خلاف مکمل شٹر ڈاؤن

NEXT article

بلکتا مغربی بلوچستان

LEAVE A REPLY