بلوچ ری پبلکن پارٹی کی جانب سے شاہ شہیداں نواب اکبر بگٹی کی دسویں برسی کی مناسبت سے 26 اگست کو بلوچستان بھر میں شٹر ڈاون اور پہیہ جام ہڑتال کی کال

بلوچ ری پبلکن پارٹی کی جانب سے شاہ شہیداں نواب اکبر بگٹی کی دسویں برسی کی مناسبت سے 26 اگست کو بلوچستان بھر میں شٹر ڈاون اور پہیہ جام ہڑتال کی کال

2020-03-30 14:52:15
Share on

بلوچ ری پبلکن پارٹی کی جانب سے شاہ شہیداں نواب اکبر بگٹی کی دسویں برسی کی مناسبت سے 26 اگست کو بلوچستان بھر میں شٹر ڈاون اور پہیہ جام ہڑتال کی کال
بلوچ ری پبلکن پارٹی کی جانب سے شاہ شہیداں نواب اکبر بگٹی کی دسویں برسی کی مناسبت سے 26 اگست کو بلوچستان بھر میں شٹر ڈاون اور پہیہ جام ہڑتال کی کال دی گئی ہے۔ بی آر پی کے مرکزی بیان میں کہا گیا ہے کہ بلوچستان بھر میں پارٹی کارکنان، بلوچ جہد آجوئی سے منسلک جہدکار اور پوری بلوچ قوم ڈاڈائے قوم شہید نواب اکبر بگٹی کی یاد میں تقاریب کا انعقاد کرکے انکی زندگی، جدوجہد اور عظیم قربانی پر روشنی ڈال کر انہیں خراج تحسین پیش کریں گے۔ اس کے علاوہ بلوچستان سے باہر کراچی اور دیگر شہروں میں شہیداعظم کی یاد میں تقاریب منعقد کی جائیں گی۔ بیرونی ممالک خاص کر یورپ بھر اور دیگر ممالک میں پارٹی چیپٹرز کی جانب سے بلوچ تحریک کے بانی کو یاد کرکے انکی جدوجہد اور قربانی کو بین الاقوامی سطح پر اجاگر کیا جائے گا اور مظلوم قوموں کی جدوجہد کی تاریخ میں صف اول کے رہنماوں میں شمار ہونے والی شخصیت نواب اکبر بگٹی کو اپنی قوم و سرزمین کی خاطر آخری سانس تک جدوجہد کرنے پر خراج تحسین پیش کیا جائے۔ آگاہی مہم، سٹڈی سرکلز، قرآن خوانی اور دعائیہ تقاریب کا انعقاد کرکے ڈاڈائے قوم کی روح کے ایصال ثواب کی خصوصی دعائیں مانگی جائیں گی۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ ایک دہائی گزرنے کے باوجود شہیداعظم کی شہادت کی یاد آج بھی ہر بلوچ مرد و عورت، جوان و پیر اور بچے و بوڑھے کے ذہن میں روز اول کی طرح تازہ ہے۔ انکی جدائی کا صدمہ آج بھی ہر بلوچ اپنے دل میں بے حد محسوس کرتا ہے اور یہی وہ طاقت ہے جو بلوچ نوجوانوں کی دل و دماغ میں تحریک میں شمولیت اور بلوچ ننگ و ناموس و قومی آجوئی کی خاطر جان کی بازی لگانے کیلئے بھی تیار کرتی ہے۔ بلوچ نوجوانوں کی بلوچ قومی جدوجہد میں جوک در جوک شمولیت اور بین الاقوامی سطح پر بلوچ قومی تحریک کی بڑھتی ہوئی مقبولیت شاہ شہیداں نواب اکبر بگٹی اور ہزاروں بلوچ شہداء کی قربانیوں کی بدولت کی ممکن ہوسکی ہے۔ دشمن ریاست کو گھمنڈ تھا کہ وہ پیران سالہ بلوچ شیر رہنما کو مکاری سے شہید کرکے بلوچ قوم کو ابدی غلامی میں دھکیل دیگی لیکن اس کے وہم و گمان میں بھی یہ بات نہیں ہوئی ہوگی کی شہید اعظم ایک شخص نہیں بلکہ ایک سوچ کا نام ہے جو شہادت کے بعد بھی لاکھوں بلوچ نوجوانوں کی ذہنوں میں نہ صرف زندہ رہے گی بلکہ انکے نظریے اور سوچ کی بدولت بلوچ جہدکار ریاست کے سامنے سیسہ پلائی دیوار بن کر کھڑے ہوجائیں گے اور بلوچ قومی جہد ایک ناقابل شکست تحریک کی شکل اختیار کرلے گی۔ بیان میں تاجر برادری اور ٹرانسپورٹرز سے اپیل کی گئی کہ بلوچستان بھر میں بی آر پی کی کال کی پر اگست کو شٹر ڈاون اور پہیہ جام ہڑتال کی بھرپور حمایت کرکے شہید اعظم نواب اکبر خان بگٹی کو خراج تحسین پیش کرکے قوم دوستی کا ثبوت دیں۔

 

Share on
Previous article

تمام آزادی پسند بلوچ 5 اگست کو برلن کے احتجاجی مظاہرے میں شرکت کریں : حیربیار مری

NEXT article

گلگدارے گون کامڑید واحد بلوچءِ زهگ بانک حانیءَ آئیءِ بیگواهیءِ بابتءَ

LEAVE A REPLY

MUST READ

غارت گستردهٔ معادنِ بلوچستان اِشغالی

غارت گستردهٔ معادنِ بلوچستان اِشغالی

بلوچستــان غربـی چگونه اشغال شـــد؟

بلوچستــان غربـی چگونه اشغال شـــد؟

بر دانش آموزان بلـوچ چه می گـذرد؟ – بخش پنجـم

بر دانش آموزان بلـوچ چه می گـذرد؟ – بخش پنجـم

شهید فدا احمدءِ تران

شهید فدا احمدءِ تران

مکران آپریشنوں کے پیچھے اصل محرک پاکستان وچین معاہدات ہیں،حیر بیار مری

مکران آپریشنوں کے پیچھے اصل محرک پاکستان وچین معاہدات ہیں،حیر بیار مری

محمود خان اچکزئی خود محکوم قوم کا فرد ہے اس کے ساتھ کیا ڈیل ہو سکتی ہے: حیربیار مری

محمود خان اچکزئی خود محکوم قوم کا فرد ہے اس کے ساتھ کیا ڈیل ہو سکتی ہے: حیربیار مری

حسیـن معروفـی کیست؟

حسیـن معروفـی کیست؟

طرح توسعه سواحل مکران – پندلے په بلوچستـــان ءِ مدامی زوربرد کنگ ءَ – اولی بهـر

طرح توسعه سواحل مکران – پندلے په بلوچستـــان ءِ مدامی زوربرد کنگ ءَ – اولی بهـر

مـاتی زبان ءِ ميـاں استمانـی روچ

مـاتی زبان ءِ ميـاں استمانـی روچ

جئے سندھ متحدہ محاذ کے کارکن شهید سرویچ پیرزادہ کے والد لطف علی سے گفتگو

جئے سندھ متحدہ محاذ کے کارکن شهید سرویچ پیرزادہ کے والد لطف علی سے گفتگو

شہید شاہینہ کے قتل سے نا صرف اس کی والدہ اور بہنیں اب بے سہارا ہو گئی ہیں بلکہ بلوچستان اور خاص کر کیچ مکران ایک روایت ساز دلیر بیٹی سے بھی محروم ہو گیا ہے

شہید شاہینہ کے قتل سے نا صرف اس کی والدہ اور بہنیں اب بے سہارا ہو گئی ہیں بلکہ بلوچستان اور خاص کر کیچ مکران ایک روایت ساز دلیر بیٹی سے بھی محروم ہو گیا ہے

بلوچستان میں ریفرینڈم نہیں چاہتے: حیر بیار مری

بلوچستان میں ریفرینڈم نہیں چاہتے: حیر بیار مری

پشتون قوم دوست روڑ ،نالی کی سیاست سے نکل کر پاکستانی قبضہ گریت کے خلاف آواز بلند کریں : حیربیار مری

پشتون قوم دوست روڑ ،نالی کی سیاست سے نکل کر پاکستانی قبضہ گریت کے خلاف آواز بلند کریں : حیربیار مری

بیست ءُ یک فروری ماتی زبانانی میان اُستمانی روچءِ بابتءَ گپ وترانے گون ملاّ مراد ءَ

بیست ءُ یک فروری ماتی زبانانی میان اُستمانی روچءِ بابتءَ گپ وترانے گون ملاّ مراد ءَ

سوءِ استفاده اشغالگران از فاجعه زلزله در کوردستان

سوءِ استفاده اشغالگران از فاجعه زلزله در کوردستان