بلوچ سرزمین پر قابض ریاستوں کا بلوچ دشمن خندقیں اور دیواریں کھڑی کرنے کا مشترکہ شازش

MUST READ

بلوچ ری پبلکن پارٹی کی جانب سے شاہ شہیداں نواب اکبر بگٹی کی دسویں برسی کی مناسبت سے 26 اگست کو بلوچستان بھر میں شٹر ڈاون اور پہیہ جام ہڑتال کی کال

بلوچ ری پبلکن پارٹی کی جانب سے شاہ شہیداں نواب اکبر بگٹی کی دسویں برسی کی مناسبت سے 26 اگست کو بلوچستان بھر میں شٹر ڈاون اور پہیہ جام ہڑتال کی کال

راهی بجز دفاع از موجودیت ملی و آزادی بلوچستــان باقی نمانده است

راهی بجز دفاع از موجودیت ملی و آزادی بلوچستــان باقی نمانده است

بلوچ نوجوانوں کی تحریک میں جوق در جوق شمولیت حوصلہ افزاء عمل ہے : بشیر زیب بلوچ

بلوچ نوجوانوں کی تحریک میں جوق در جوق شمولیت حوصلہ افزاء عمل ہے : بشیر زیب بلوچ

پِگــری گُلامـــی – چارمــی بهـــر

پِگــری گُلامـــی – چارمــی بهـــر

ایران کا غصہ

ایران کا غصہ

جان مذاکره کنندگان در خطر است

جان مذاکره کنندگان در خطر است

We Strongly Condemn Pakistan for Abducting Indian Citizen, Gulbushan Yadhu! Anil Boluni

We Strongly Condemn Pakistan for Abducting Indian Citizen, Gulbushan Yadhu! Anil Boluni

اعلامیه سازمان جیش العدل

اعلامیه سازمان جیش العدل

خاطره شهدای دِزَّک و هُشَّک جاودان خواهد ماند

خاطره شهدای دِزَّک و هُشَّک جاودان خواهد ماند

گروہی سوچ اور منتشر بلوچ قوت – اداریہ

گروہی سوچ اور منتشر بلوچ قوت – اداریہ

بابائے بلوچ نواب خیر بخش مری کا نمازہ جنازہ نیو کاهان میں ادا کردیا گیا

بابائے بلوچ نواب خیر بخش مری کا نمازہ جنازہ نیو کاهان میں ادا کردیا گیا

زبانهای اصیل کوردی، تورکی، تورکمنی، عربی و بلوچی زنده هستند

زبانهای اصیل کوردی، تورکی، تورکمنی، عربی و بلوچی زنده هستند

قمبرچاکرءِ زندءِ سرا چماشانکے

قمبرچاکرءِ زندءِ سرا چماشانکے

بلوچستان لبریشن فرنٹ کے کمانڈر ڈاکٹر اللہ نذر سے خصوصی انٹرویو

بلوچستان لبریشن فرنٹ کے کمانڈر ڈاکٹر اللہ نذر سے خصوصی انٹرویو

بلوچستان میں ریفرینڈم نہیں چاہتے: حیر بیار مری

بلوچستان میں ریفرینڈم نہیں چاہتے: حیر بیار مری

بلوچ سرزمین پر قابض ریاستوں کا بلوچ دشمن خندقیں اور دیواریں کھڑی کرنے کا مشترکہ شازش

2020-03-31 12:23:42
Share on

Saturday, September 13

ایرانی رجعت پسند حکومت نے مغربی اور مشرقی بلوچستان میں ظاھری طور پر منشیات کی روک تھام کا نام دیکر 2007 میں کئی گہری فٹ خندقیں کھونے اور دیواریں کھڑی کرنے کا باقاعدہ طور پر آغار کیا جس میں بلوچستان کی ساحلی بیلٹ سے لیکر سے افغانستان کا سرحدی علاقہ شامل ھے جھاں پر بلوچستان کی حدود ختم ھوتی ھے یہ تقرببآ 700 کیلومیٹر لمبی ھے اور اسکا اب 90 % تعمیر تکمیل تک پہنچ چکا ھے۔
اس منصوبے میں ایران نے ایک کثیر رقم 590 میلیون ڈالرکا متخص کیا، اتنی بڑی رقم اس منصوبہ پر خرچ کرنا بلوچستان کی قومی آزادی کی تحریک کے خطرات کو روکنے اور بلوچ قومی رابطے کو منقطع کرنا اور کلچری اور اقتصادی طور پر انھیں مفلوج کرنا ھے تا کہ اس قومی آزادی کی تحریک کو فعال ھونے سے مختلف حوالے سے روک تھام کی جاسکے ۔
اپریل 2011 کو کو سابق ایرانی وزیر دفاع جنرل احمد وحیدی نے پاکستان کو مشرقی بلوچستان اور افغان سرحد پر خندقیں کھودنے پر تمام اخراجات کو ادا کرنے اور اس پر خفیہ طور پر دستخط بھی کئے گئے اور اس رقم کی ایک قسط بھی پاکستانی فوج اور اداروں کو دیگئی، مگر پاکستان کی طرف سے اس منصوبہ پر عمل درآمد تعطل کا شکار رھا۔ اب ایرانی حکومت کے دوبارہ اصرار پر اس کام کا آغاز پاکستانی فوج اور ایرانی ماھرین کی نگرانی میں چند ھفتوں سے جاری ھے۔ اور اسکے تمام اخراجات اور اس منصوبہ کو عملی جامع پہنانے کے لئے پاکسانی افسران کی خوش آمد کے لئے بڑی رقم متخص کی گئی ھے۔

Anti-B8 1

Share on
Previous article

قلات و نوشکی میں بڑے پیمانے پہ فوجی نقل و حرکت کی اطلاع

NEXT article

جیش العدل کا آسکان سراوان میں پاسداران کے کیمپ پر حملہ، 10 پاسدار ھلاک ، 2 ٹینک اور کیمپ تباہ

LEAVE A REPLY