بلوچ قوم اپنی توجہ ثانوی اور غیر ضروری مسلوں پر لگانے کے بجائے ابتدائی اور اصل مسلۂ یعنی قومی آزادی کی جدوجہد کو مضبوط اور موثر بنانے پر مرکوز کریں ، بلوچ قوم دوست رہنما حیربیار مری کا قوم سے اپیل

بلوچ قوم اپنی توجہ ثانوی اور غیر ضروری مسلوں پر لگانے کے بجائے ابتدائی اور اصل مسلۂ یعنی قومی آزادی کی جدوجہد کو مضبوط اور موثر بنانے پر مرکوز کریں ، بلوچ قوم دوست رہنما حیربیار مری کا قوم سے اپیل

2020-03-26 15:14:54
Share on

بلوچ قوم دوست رہنما حیربیار مری نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ آوارن میں بلوچ فرزندوں پر پاکستانی فورسز کی جانب سے حملہ اور اسے مذہبی رنگ دینا بلوچستان میں پاکستانی فوج کی شکست اور بوکھلاہٹ کو ظا ہر کرتا ہے ان میں اتنا غیرت بھی نہیں ہے کہ اس کی ذمہ داری قبول کریں۔ قبضہ سے لے آج تک پاکستان نے مقبوضہ بلوچستان میں لوٹ مار اور بلوچ قوم کا قومی اور معاشی قتل عام کیا قبضہ اور بلوچ نسل کشی کے خلاف آواز اٹھانے والوں کو زندانوں میں ڈالا سینکڑوں لوگوں کو ماورائے عدالت قتل کر کے روڈوں اور بیابانوں میں پھینک دیا ۔ لیکن پاکستان کی یہ ظلم و بربریت بلوچ قوم کے جوانوں کی آواز نہیں دبا سکاانہوں نے کہا کہ بلوچستان کا کیس انٹرنیشنلائز ہونے کی وجہ سے پاکستان بین الاقوامی سطح پر دباؤ کا شکار ہے اورہمیشہ بلوچ نسل کشی کے لیے مخلتف حربے استعمال کرتا آرہاہے ستر کی دھائی میں بلوچوں کو کمیونسٹ اور سوشلسٹکا لیبل لگا کر طالبان اور مذہبی لباس پہن کر شہید کیا جاتا تھا اب انہیں ذکری ہندو را موساد اور امریکہ کا ایجنٹ کہ پاکستانی فوج قتل کر دیتا ہے اور اپنے آپ کو بر الذمہ کرنے کے لیے مختلف مذہبی ناموں سے حملوں کو قبول کرتا ہے ،حیربیارنے کہا کہ بلوچستان خاص کر مکران میں پاکستانی فوج اپنے کرایہ کے مذہبی دہشت گردوں سے لڑکیوں کے سکولوں کو بند کروا کر رہا ہے اور ان کے زریعے بلوچ قوم میں مذہبی منافرت پھیلانے کے لیے ذکری اور ہندو بلوچوں کو نشانہ بنارہا ہے تاکہ اس طرح وہ بلوچ جیسے سیکولر قوم کو مذہبی بنیادوں پر تقسیم کر کے بلوچ قومی جدوجہد آزادی کو کاؤنٹر کر سکے اور دنیا میں یہ بھی تاثر دے کہ بلوچستان میں بلوچ قوم مذہبی تفریق یا اختلافات کی وجہ سے ایک دوسرے کو مار رہے ہیں انہوں نے کہا کہ پاکستانی فوج ڈاکوؤں اور جرائم پیشہ افراد کو خرید کر بلوچ قومی جدوجہد کو کمزور کرنے کے لیے بلوچ قوم کے خلاف استعمال کر رہا ہے یہ لوگ پاکستانی فوج کی مدد سے بلوچستان میں قبائلی جھگڑوں کو ہوا دینے کے ساتھ ساتھ بلوچ قوم کو لسانی اور مذہبی بنیادوں پر تقیسم کرنے کی بھی کوشش کر رہے ہیں پاکستان کی روز اول سے یہ کوشش رہا ہے کہ بلوچسان میں شدت پسندی کو ہوا دے کر بلوچ قوم کو مذہبی جنونیت کی جانب دھکیل دے تاکہ بلوچ بھی پشتونوں کی طرح اپنے وطن کو بھول کر ایک دوسرے کا مذہبی بنیادوں پر خون بہا لیں اور پنجاب کے لیے بلوچ قومی وسائل کو لوٹنا آسان ہوسکے۔ دنیا کی تاریخ میں ہر جگہ قابضوں کے خلاف جدوجہد ہوئی وہاں بھی ایسے بے ضمیر اور وطن فروشوں نے قابضین کا ساتھ دیا لیکن بعد میں جعفر اور صادق کے نام سے رسوا ہوئے آج انکی نسلیں بھی اپنا نام ان کے نام سے جوڑنے سے شرم محسوس کرتے ہیں اور جو لوگ قابضین کے خلاف سیسہ پلائی ہوئی دیوار بنے قربانیاں دیں آج ان کی نسلیں دنیا میں سر اٹھا کے جی رہے ہیں۔ حیربیار مری نے بلوچ قوم سے اپیل کیا کہ وہ اپنی توجہ کو کو ثانوی اور غیر ضروری مسلوں پر لگانے کے بجائے ابتدائی اور اصلی مسلۂ یعنی قومی آزادی کی جدوجہد کو مضبوط اور موثر بنانے پر مرکوز کریں اور اپنی تمام تر طاقت اور قوت کوپاکستانی غلامی سے نجات دلانے کے لییاستعمال کریں اور دشمن کی فریب کاریوں کو اچھی طرح پہچان لیں حیربیار مری نے بین الاقوامی برادری سے کہا پاکستان اس وقت امریکہ کے افغانستان سے نکلنے کے انتظار میں ہے اور بلوچستان میں اپنے مذہبی گروہوں کو مضبوط کر رہا ہے تاکہ امریکہ کے نکلنے کے بعد افغانستان اور خطے کو دوبارہ بدامنی کی جانب دھکیل دے انہوں نے کہا کہ پاکستان اس وقت امریکہ اور اتحادی افواج کے فوجی سازو سامان پر بھی نظریں جمائے رکھا ہے کہ اتحادی فوجوں کے چلے جانے کے بعد وہ سازوسامان ان کے ہاتھ میں آجائے تاکہ وہ طالبان اور جہادی تنظیموں کو مزید مضبوط کر کے اس خطے میں بدامنی اور مہذب اقوام کے خلاف نفرت کو مزید پھیلائے انہوں نے کہا پاکستان کے ہاتھ پہلے سے امریکی و برطانوی فوجیوں کے خون سے رنگے ہویے ہیں اگر امریکہ کے افغانستان سے چلے جانے کے بعد تمام اسلحہ اور جنگی سازوسامان انہی خون سے رنگے ہوئے ہاتھوں میںآگیا تو اس سے نہ صرف امریکہ کی گزشتہ 13 سالوں کی افغانستان میں جمہوریت کو مستحکم کرنے اور خطے میں ا نہتا پسندی کو ختم کرنے کی کوششوں پر پانی پھیر جائیگا بلکہ خطہ مزید تباہی سے دوچار ہوجائیگا امریکہ اور برطانیہ اور دیگر مہذب اقوام کو چاہیے کہ وہ خطے مٰیں بلوچ اور جمہوریت پسند افغانوں کو مضبوط کریں یہی دونوں قومیں اس خطے میں امن و آشتی کے لیے مضبوط کردار اد ا کر سکتے ہیں حیربیار مری نے کہا کہ برطانیہ امریکہ اور فرانس کی ISIS کے خلاف کردوں کی حمایت خوش آئیند امر ہے لیکن عالمی برادری کی کرد جیسے سیکولر قوم کو نظر انداز کرنے کی وجہ سے بھی اس خطے میں جنونی مذہبی انتہا پسند مضبوط ہوئے ہیں جو آج عراق اور شام میں بسنے والے سیکولر کردوں یزیدیوں اور عیسائیوں کا قتل عام کر رہے ہیں اس وقت بلوچستان میں بھی یہی صورتحال ہے پاکستان اسلامی مذہبی انتہا پسندوں کو طالبان اور حقانی نیٹ ورک کی شکل میں مضبوط کر رہا ہے اور انہیں افغانستان میں اتحادی فوجوں اور بلوچستان میں بلوچ قوم کے خلاف استعمال کر رہا ہے اس کے باوجود امریکہ برطانیہ اور دیگر مہذب اقوام کی بلوچ قوم کو اس طرح انظر انداز کرنا سمجھ سے بالاتر ہے انہوں نے کہا کہ بلوچ قوم اس خطے واحد سیکولر قوم ہے جو کہ کرد وں کی طرح اپنے قومی آزادی کے لیے جدوجہد کر رہا ہے جس کی وجہ سے بلوچ قوم سب سے زیادہ پاکستانی فوج اور ان کے پالے ہویے مذہبی جنونی انتہا پسندوں کے نشانے پرہے اس سے پہلے کہ یہاں پاکستانی فوج کی مدد سے اسلامی انتہا پسند مضبوط ہو کردوسرا ISIS بن جائیں مہذب اقوام کو سیکولر بلوچ سندھی اور جمہوریت پسند افغانوں کی حمایتکرنی چاہیے تاکہ اس خطہ کو شام اور عراق بننے سے بچایا جائے

Share on
Previous article

بلوچستان کے علاقے تمپ گومازی میں سیکورٹی فورسز کا فوجی آپریشن آغاز – بلوچ ہیومن رائٹس آرگنائزیشن

NEXT article

دو دانک گوں رودراتکی بلوچستان ءِ راجی رھشوناں

LEAVE A REPLY

MUST READ

تمپ و گومازیء پاکستانی فوجی آپریشنء بابتء بلوچ ہیومن راٹس آرگنائزیشن ء سروک بی بی گل بلوچء گو ن گپ تران

تمپ و گومازیء پاکستانی فوجی آپریشنء بابتء بلوچ ہیومن راٹس آرگنائزیشن ء سروک بی بی گل بلوچء گو ن گپ تران

پاکستانی افواج صرف اور صرف نہتے خواتین اور بچوں کو ہی اغوا کر سکتے ہیں ان کی قابلیت یہی تک محدود ہے۔ نواب براہمدغ بگٹی

پاکستانی افواج صرف اور صرف نہتے خواتین اور بچوں کو ہی اغوا کر سکتے ہیں ان کی قابلیت یہی تک محدود ہے۔ نواب براہمدغ بگٹی

از شیخ خزعل تا شهید احمد نیسی

از شیخ خزعل تا شهید احمد نیسی

واجه پُردلی بلوچ ءُ واجه سرمچارءِ بلوچ گپ و تران گون کابل ٹی ویءَ بلوچ شهمیرانیءِ روچءِ بابتَءَ

واجه پُردلی بلوچ ءُ واجه سرمچارءِ بلوچ گپ و تران گون کابل ٹی ویءَ بلوچ شهمیرانیءِ روچءِ بابتَءَ

کوئٹہ میں ھزارہ کمونیٹی پر خودکش بم دھماکہ کے سانحہ پر ریڈیو گوانک کی خصوصی گفتگو ھزارہ دموکرااٹیک پاڑٹی کے عبدالخالق کے ساتھ

کوئٹہ میں ھزارہ کمونیٹی پر خودکش بم دھماکہ کے سانحہ پر ریڈیو گوانک کی خصوصی گفتگو ھزارہ دموکرااٹیک پاڑٹی کے عبدالخالق کے ساتھ

هجوم وحشيانه قشـون پارس و اشغال بلوچستان در سـال ۱۳۰۷ هجـری شمسـی

هجوم وحشيانه قشـون پارس و اشغال بلوچستان در سـال ۱۳۰۷ هجـری شمسـی

بلوچستان اِشغالی در چنگال خونینِ غارتگران

بلوچستان اِشغالی در چنگال خونینِ غارتگران

من ءُ تو همراہ نہ ایں – حفیظ روف

من ءُ تو همراہ نہ ایں – حفیظ روف

جئے سندھ متحدہ محاذ کے کارکن شهید سرویچ پیرزادہ کے والد لطف علی سے گفتگو

جئے سندھ متحدہ محاذ کے کارکن شهید سرویچ پیرزادہ کے والد لطف علی سے گفتگو

گپ و ترانے چا گیبنءَ گون شهید حیات بیوسءِ گهارءَ

گپ و ترانے چا گیبنءَ گون شهید حیات بیوسءِ گهارءَ

دو دانک ” شورای دمکراسی خواهان ایران” ءِ باروا

دو دانک ” شورای دمکراسی خواهان ایران” ءِ باروا

گپ و ترانے گون وائس فار بلوچ میسنگ پرسانی سروک واجہ قدیر بلوچءَ

گپ و ترانے گون وائس فار بلوچ میسنگ پرسانی سروک واجہ قدیر بلوچءَ

جیش العدل کے کمانڈر ایوب بلوچ سے گفتگو

جیش العدل کے کمانڈر ایوب بلوچ سے گفتگو

بلوچ وطن دوست رہنما حیربیار مری کا خصوصی انٹرویو

بلوچ وطن دوست رہنما حیربیار مری کا خصوصی انٹرویو

بیست ءُ یک فروری ماتی زبانانی میان اُستمانی روچءِ بابتءَ گپ وترانے گون پروفیسرعبدالواحد بزدارءَ

بیست ءُ یک فروری ماتی زبانانی میان اُستمانی روچءِ بابتءَ گپ وترانے گون پروفیسرعبدالواحد بزدارءَ