جیش العدل کا آسکان سراوان میں پاسداران کے کیمپ پر حملہ، 10 پاسدار ھلاک ، 2 ٹینک اور کیمپ تباہ

MUST READ

بلـوچ ءِ هـوں هم سُهـر اِنت

بلـوچ ءِ هـوں هم سُهـر اِنت

Truck hits marchers of Long March, two injured

Truck hits marchers of Long March, two injured

شکست ایران بعنوان یک واحد سیاسی – جغرافیایی

شکست ایران بعنوان یک واحد سیاسی – جغرافیایی

گوانڈین ریڈیو رپورٹءِ چا تمپءَ

گوانڈین ریڈیو رپورٹءِ چا تمپءَ

خصومتِ دولتِ ایران با زبان بلوچـی و دلایلِ آن

خصومتِ دولتِ ایران با زبان بلوچـی و دلایلِ آن

برطانیہ خان قلات کے ساتھ اپنے76 18 کی توسیع شدہ معاہدے کی پابندی کریں ۔ حیر بیار مری

برطانیہ خان قلات کے ساتھ اپنے76 18 کی توسیع شدہ معاہدے کی پابندی کریں ۔ حیر بیار مری

آری من بلوچــم نه پاکستانی يا ايرانی – مليتــم بلـــوچ، گلزمين وطنم بلوچستــان و زبان مادريم شهدين بلوچــی است. من بلوچـــم. همين اســت هويــت من

آری من بلوچــم نه پاکستانی يا ايرانی – مليتــم بلـــوچ، گلزمين وطنم بلوچستــان و زبان مادريم شهدين بلوچــی است. من بلوچـــم. همين اســت هويــت من

شھید الیاس نزرءِ ماتءِ کلوّہ

شھید الیاس نزرءِ ماتءِ کلوّہ

حمید صمصام نمونه بارز یک فاشیست ملی ـ مذهبی

حمید صمصام نمونه بارز یک فاشیست ملی ـ مذهبی

نواب اکبرخانِءِ سالروچءِ درگتءَ تران

نواب اکبرخانِءِ سالروچءِ درگتءَ تران

طرحِ تجزیه و تقسیـم بلوچستـان خیانتی است بزرگ به ملت بلـوچ سرزمین بلوچستــان درطول تاریخ به مردم مقاوم بلــوچ تعلـق داشته است

طرحِ تجزیه و تقسیـم بلوچستـان خیانتی است بزرگ به ملت بلـوچ سرزمین بلوچستــان درطول تاریخ به مردم مقاوم بلــوچ تعلـق داشته است

جنگ روانی استاندار اشغالگران در بلوچستان

جنگ روانی استاندار اشغالگران در بلوچستان

بلوچستان میں انسانی حقوقوں کی پائیمالی کے خلاف انڈیا سے بی جی پی کے ترجمان انیل بالونی صاحب سے گفتگو – ریڈیو حال

بلوچستان میں انسانی حقوقوں کی پائیمالی کے خلاف انڈیا سے بی جی پی کے ترجمان انیل بالونی صاحب سے گفتگو – ریڈیو حال

جنگ عــرب و عجم

جنگ عــرب و عجم

شهید کمبر چاکر

شهید کمبر چاکر

جیش العدل کا آسکان سراوان میں پاسداران کے کیمپ پر حملہ، 10 پاسدار ھلاک ، 2 ٹینک اور کیمپ تباہ

2020-03-31 12:24:43
Share on

مغربی بلوچستان / جیش العدل کے نیوز عدالت کے مطابق گزشتہ (شب) رات کو سراوان کے سرحدی حدود اسکان میں پاسداروں کے کیمپ پرحملہ کیا گیا جو کہ رات کے 1 تا 4 بجے کے درمیان جاری رھی۔ اسی حملے کے دوران جیش العدل کے سرمچاروں سے بارود سے بھری گاڑی کیمپ کے دروازے کے قریب پارک کی اور اسے ریمنوٹ کنٹورل سے اڑایا گیا۔ جس کے نتیجے میں 2 ٹینک تباہ اور کیمپ منہدم ھوا، اس حملہ میں 10 پاسدار ھلاک اور متعدد زخمی ۔پاسداروں کی مدد کے لئے تازہ دم دستہ ٹینکوں سے جیش العدل کے سرمچاروں پر حملہ کیا گیا ، مگر سرمچاروں نے جدید ھتیاروں سے حملہ کر کے انھیں پسپا کردیا۔
یہ حملہ جیش نصر کے سربراہ عبدالرؤف ریگی کے قتل کے انتقام کی ایک کڑی ھے جو کہ چند دنوں قبل ایرانی خفیہ ادارے” اطلاعات” کی ایماہ پر قتل کئے گئے تھے۔ جیش العدل نے بلوچستان تمام آبادکاروں کو اس سال کے آخر تک بلوچستان سے نکلنے کی مہلت دی ھے ورنہ دوسری صورت ان پر حملہ کیا جا سکتا ھے، جیش العدل نے ان تمام بلوچوں کو بھی انتباہ کی ھے جو کہ بلوچ دشمن حکومت کے ساتھ ملکر بلوچ کش منصوبوں میں شریک ھیں ، باز رھے ورنہ انھیں سخت سزا دی جاسکتی ھے۔ جیش العدل اپنے پچھلے پریس ریلیزوں میں قومی جھدوجھد اورایرانی حکومتی مذھبی رواداری کے خلاف مسلحانہ جنگ کا اعلان کرچکا ھے۔

Share on
Previous article

بلوچ سرزمین پر قابض ریاستوں کا بلوچ دشمن خندقیں اور دیواریں کھڑی کرنے کا مشترکہ شازش

NEXT article

اعلامیه سازمان جیش العدل

LEAVE A REPLY