فری بلوچستان موومنٹ نے اپنے بیان میں کہا گزشتہ دنوں ایران نے اپنے فورس مرصاد کے زریعئے برطانوی سامراج کی جانب سے کیھنچی گئی مصنوعی لکیر گولڈ سمتھ لائن پر مقبوضہ بلوچستان کے دونوں اطراف تیل کے کاروبار سے منسلک بلوچوں پر اندھادھند فائرنگ کی جس سے ایرانی فورس کے گولیوں کی زد میں آکر 10 افراد جائے وقوعہ پر شہید ہوگئے۔

MUST READ

پاکستان جہادی کلچر ودہشت گردی کا مرکز و فیکٹری ہے : حیربیار

پاکستان جہادی کلچر ودہشت گردی کا مرکز و فیکٹری ہے : حیربیار

هم اور نوید بلوچ جیسے هزاروں بلوچ خود پاکستانی ریاستی دهشتگری کا شکار هیں – وحید بلوچ برلن جرمنی

هم اور نوید بلوچ جیسے هزاروں بلوچ خود پاکستانی ریاستی دهشتگری کا شکار هیں – وحید بلوچ برلن جرمنی

دُزّآپ ءِ بُلـوارِ (زاهدانِءِ چوک) بلوچستـــان

دُزّآپ ءِ بُلـوارِ (زاهدانِءِ چوک) بلوچستـــان

کچھ کو ترجیج دینا اور دوسروں کو نظر انداز کرنا یو ین کے مقصد پر ایک سوالیہ نشان ہے۔ حیربیار مری

کچھ کو ترجیج دینا اور دوسروں کو نظر انداز کرنا یو ین کے مقصد پر ایک سوالیہ نشان ہے۔ حیربیار مری

 سخنگوی جنبش آزادی بلوچستان (FBM)، گمشاد بلوچ در بیانیه ای اظهار داشت که زندگی مردم بلوچ در نتیجه نه دهه استعمار و اشغال ایران، اکنون غیرقابل تحمل شده است

سخنگوی جنبش آزادی بلوچستان (FBM)، گمشاد بلوچ در بیانیه ای اظهار داشت که زندگی مردم بلوچ در نتیجه نه دهه استعمار و اشغال ایران، اکنون غیرقابل تحمل شده است

  دولتهایی که بلوچستان را اشغال کرده‌اند، مسئول و عامل ترور بانو کریمه بلوچ هستند  ـ جنبش استقلال طلبان کوردستان

دولتهایی که بلوچستان را اشغال کرده‌اند، مسئول و عامل ترور بانو کریمه بلوچ هستند ـ جنبش استقلال طلبان کوردستان

بلوچ عوام پاکستان کے ساتھ رہنے کی خواہشمند نہیں ہیں- حیربیار مری

بلوچ عوام پاکستان کے ساتھ رہنے کی خواہشمند نہیں ہیں- حیربیار مری

وقت کا بھی یہی تقاضا ہے کہ ہم قابضین کی مسلط کردہ نظام کو مضبوط بنانے کے بجائے قومی سوچ کو وسعت دیں

وقت کا بھی یہی تقاضا ہے کہ ہم قابضین کی مسلط کردہ نظام کو مضبوط بنانے کے بجائے قومی سوچ کو وسعت دیں

گپے گـوں ناشریں امینی فـرد

گپے گـوں ناشریں امینی فـرد

پاکستان بلوچ قومی آزادی کی جدوجہد اور کامیابیوں اور بلوچ نوجوانوں کی قربانیوں سے بوکھلاہٹ کا شکار ہو کر اس نے اب بلوچ عورتوں اور بچوں کا اغوا شروع کر رکھا ہے – حیربیار مری

پاکستان بلوچ قومی آزادی کی جدوجہد اور کامیابیوں اور بلوچ نوجوانوں کی قربانیوں سے بوکھلاہٹ کا شکار ہو کر اس نے اب بلوچ عورتوں اور بچوں کا اغوا شروع کر رکھا ہے – حیربیار مری

ھَشر ءُ کمک کاری گرانبھائیں بلوچی دود اَنت

ھَشر ءُ کمک کاری گرانبھائیں بلوچی دود اَنت

گوانک خضدارءِ ھندی حالکار شھید فرید دلاوری (ملوّک جان)ءِ شهادتءِ دومّی سالروچءَ گوانگءِ ٹیم آئيءِ جُھدا پا بلوچستانءِ آجوئی کاروانءَ ستا دنت

گوانک خضدارءِ ھندی حالکار شھید فرید دلاوری (ملوّک جان)ءِ شهادتءِ دومّی سالروچءَ گوانگءِ ٹیم آئيءِ جُھدا پا بلوچستانءِ آجوئی کاروانءَ ستا دنت

کوئٹہ میں اتنی بڑی تعداد میں وکلاء اور نہتے شہریوں کا قتل عام انتہائی افسوسناک هے – ڈاکٹر اللہ نذر

کوئٹہ میں اتنی بڑی تعداد میں وکلاء اور نہتے شہریوں کا قتل عام انتہائی افسوسناک هے – ڈاکٹر اللہ نذر

بلوچ ورنایانی کشت ءُ کوش تروریستی سپاه ءِ کارانت

بلوچ ورنایانی کشت ءُ کوش تروریستی سپاه ءِ کارانت

سپاهِ قُـدس ءُ آی۰ اِس۰ آی ءِ « مذاکـرات » ءِ پنـــدل

سپاهِ قُـدس ءُ آی۰ اِس۰ آی ءِ « مذاکـرات » ءِ پنـــدل

فری بلوچستان موومنٹ نے اپنے بیان میں کہا گزشتہ دنوں ایران نے اپنے فورس مرصاد کے زریعئے برطانوی سامراج کی جانب سے کیھنچی گئی مصنوعی لکیر گولڈ سمتھ لائن پر مقبوضہ بلوچستان کے دونوں اطراف تیل کے کاروبار سے منسلک بلوچوں پر اندھادھند فائرنگ کی جس سے ایرانی فورس کے گولیوں کی زد میں آکر 10 افراد جائے وقوعہ پر شہید ہوگئے۔

2021-02-24 00:03:34
Share on

کوئٹہ (پریس ریلیز) فری بلوچستان موومنٹ نے اپنے بیان میں کہا گزشتہ دنوں ایران نے اپنے فورس مرصاد کے زریعئے برطانوی سامراج کی جانب سے کیھنچی گئی مصنوعی لکیر گولڈ سمتھ لائن پر مقبوضہ بلوچستان کے دونوں اطراف تیل کے کاروبار سے منسلک بلوچوں پر اندھادھند فائرنگ کی جس سے ایرانی فورس کے گولیوں کی زد میں آکر 10 افراد جائے وقوعہ پر شہید ہوگئے۔

فائرنگ کے اس واقعے میں اب تک کی اطلاعات کے مطابق متعدد افراد زخمی ہوئے ہیں۔ جن میں سے بعض زخمیوں کی حالت تشویشناک بتائی جارہی ہے۔ زخمیوں کو مختلف ہسپتالوں میں منتقل کیا گیاہے، تاہم زیادہ تعداد میں شدید زخمی ہونے کی وجہ سے جانبحق ہونے والوں کی تعداد میں اضافے کا امکان ہیں۔

فائرنگ کا واقعہ ایران کے زیر قبضہ بلوچستان کے علاقے حق آباد میں پیش آیا جوکہ پاکستان کے زیر قبضہ بلوچستان میں ضلع پنجگور کے علاقے پروم سے متصل ہے۔

ایف بی ایم گزشتہ روز کے اس ایرانی جارحیت کی شدید الفاظ میں مذمت کرنے کے ساتھ انسانی حقوق کے بین القوامی اداروں اور عالمی عسکری اتحاد نیٹو اور امریکہ سے اپیل کرتی ہے کہ وہ مقبوضہ بلوچستان میں قابض ایران و پاکستان کے مشترکہ ریاستی بدمعاشیوں کو لگام دینے کےلئے بلوچوں کا ساتھ دیں تاکہ ان ریاستوں کو عالمی عدالتوں کے سامنے انصاف کے کہٹھرے میں پیش کیا جا سکے۔

مقبوضہ بلوچ سرزمین پر قائم جبری سرحد گولڈ سمتھ لائن کے دونوں اطراف رہنے والے بلوچوں پر مشتمل انسانی آبادی بے پناہ قدرتی وسائل کے باوجود خط غربت کے گراف سے بھی نیچے زندگی گزارنے پر مجبور ہیں۔

ایف بی ایم نے اپنے بیان میں مزید کہا امریکہ نے ایران پر اس لیئے درست اقتصادی پابندیاں لگائی کیونکہ ایرانی دہشتگرد ریاست جو کہ مشرق وسطی کے خطے میں اپنے پروکسیز کے زریعئے بدامنی پیھلانے میں کلیدی کردار ادا کرکے مسلسل ان کی سرپرستی کررہی ہے۔ اس کے علاوہ ایران عالمی امن کو تباہ کرنے کیلئے ایٹم بم بنانے کیلئے امریکی اقتصادی پابندیوں کو خاطر میں لائے بغیر اپنے توسیع پسندانہ عزائم کی تکمیل کیلئے یورینیم کی افزودگی کو تاحال جاری رکھی ہوئی ہے۔

ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریفی نے اپنے جنگی جرائم پر پردہ ڈالنے کیلئے تو امریکہ پر اقتصادی دہشتگردی کے الزام لگانے سے کوئی شرم محسوس نہیں کرتے لیکن دوسری جانب مظلوم بلوچ جو اپنے خاندان کے کفالت کی خاطر چھوٹے پیمانے پر تیل کے کاروبار سے منسلک افراد کو ایرانی فوج گولیوں سے نشانہ بناتا ہے اور وزیر خارجہ جواد ظریف سمیت پوری ملا رجیم خاموش ہے۔

بلوچ قوم کے افراد جو کہ روز مرہ اشیا کی تجارت اپنے ہی سرزمین پر کررہے ہیں نہ کہ کسی دوسرے ملک کی سرحد کو کراس کی یے۔قابض ایران سمیت دنیا کی کوئی بھی طاقت بلوچ قوم کو اپنے ہی سرزمین پر آمدورفت کو روکنے کیلئے کسی قسم کا جواز نہیں رکھ سکتے۔

اس خطے کی موجودہ صورتحال کو انصاف کے پیرائے میں دیکھا جائے تو اقتصادی دہشتگردی کی اصل مرتکب امریکہ نہیں بلکہ ایران ہوئی ہے۔جو کہ بلوچ کاروباری افراد پر ریاستی طاقت کے زریعئے حملہ کرکے درجنوں بلوچ فرزندوں کو ان کے اپنے ہی سرزمین پر شہید کیا ہے۔

بے روزگار بلوچ نوجوان جو کہ اپنے خاندان کی کفالت کیلئے مجبورا تیل کے چھوٹے پیمانے کے کاروبار سے منسلک ہیں، جن سے دونوں قابض پاکستان و ایران کے ریاستی ادارے ماہانہ کروڑوں روپے جبری غیر قانونی ٹیکس بھی وصول کرتے ہیں لیکن اس کے باوجود محکوم بلوچوں کو ریاستی بندوق سے فائرنگ کرکے گولیوں سے بھون ڈالا جاتا ہیں۔

پاکستان و ایران کی جانب سے اپنے مشترکہ بلوچ نسل کشی کے ایجنڈے میں روزانہ کی بنیاد پر یہ عمل دہرایا جارہا ہیں۔جو کہ سوشل میڈیا کے علاوہ عالمی میڈیا میں کئی بھی رپورٹ نہیں ہوتی۔

فری بلوچستان موومنٹ نے اپنے بیان میں مزید کہا مقبوضہ بلوچستان میں خونخوار وحشی ایرانی فوج کے ہاتھوں گولیوں کا نشانہ بننے والے بلوچ فرزندوں کی بے رحمانہ قتل و غارتگری کے خلاف پوری دنیا میں بلوچ دشمن ریاست ایران و پاکستان کے جارحیت و بربریت کے خلاف 28 فروری کو برطانیہ کے معیاری وقت کے مطابق دن2 بجے سوشل میڈیا میں ٹوئیٹر پر

#IranStopKillingBaloch

کے نام سے آگاہی کمپیئن چلایا جائیگا۔

ایف بی ایم تمام آزادی پسند بلوچ سیاسی کارکنوں اور انسانیت دوست سوشل میڈیا ایکٹوسٹ سے اپیل کرتی ہے کہ وہ مقبوضہ بلوچستان میں ان ظالم افواج کے ریاستی جارحیت اور جنگی جرائم کو دنیا کے سامنے لانے کیلئے اس کمپیئن میں بھر پور طریقے سے حصہ لیکر اپنے بلوچ دوستی اور انسانی زندگی کے بچاو کیلئے اپنے اخلاقی و سیاسی کردار کو ادا کریں۔

 

Share on
Previous article

اعتراض کارشناسان سازمان ملل به اعدام بلوچ‌ها در ایران؛ درخواست اقدام فوری جهانی برای آزادی فعالان کرد ـ بی بی سی

NEXT article

زاھدان میں سراوان کے بلوچ قتل عام کے خلاف مکمل شٹر ڈاؤن

LEAVE A REPLY