نواب مری کو بھی کاہان کوہستان مری لے جانے کے بجائے نیوکاہان کوئٹہ میں اپنے فکری ساتھیوں کے قبرستان میں سپرد خاک کیا جائے۔حیربیار مری

MUST READ

1980-مغربی بلوچستانءِ سرمچار رحیم زرد کوهیءِ کلوه

1980-مغربی بلوچستانءِ سرمچار رحیم زرد کوهیءِ کلوه

اِویــن” ءِ نوک ورنائیــں بندیـگ” – محمد کريم بلــوچ

اِویــن” ءِ نوک ورنائیــں بندیـگ” – محمد کريم بلــوچ

بلوچ راجی مزن جهدکار واجہ عبدالصمد امیریءِ زندتاک، دیوانے گون واجہ اسماعیل امیریءَ – دومی بهر

بلوچ راجی مزن جهدکار واجہ عبدالصمد امیریءِ زندتاک، دیوانے گون واجہ اسماعیل امیریءَ – دومی بهر

Attack On baloch Student In Preston University Islamabad 20410308

Attack On baloch Student In Preston University Islamabad 20410308

چرا کمبود آب “مسئله امنیتی” شــد؟

چرا کمبود آب “مسئله امنیتی” شــد؟

انساندوستیں بلوچانی کمک کاری ءُ بلوچ دژمنیں سپاہ ءِ تکانسری

انساندوستیں بلوچانی کمک کاری ءُ بلوچ دژمنیں سپاہ ءِ تکانسری

گپ و ترانے گون بی ایس او آزادءِ بنجاھی باسک لطیف جوھرءَ چآ کراچيءِ پریس کلبءِ دیمے شُدکَشی احتجاجی کیمپءَ

گپ و ترانے گون بی ایس او آزادءِ بنجاھی باسک لطیف جوھرءَ چآ کراچيءِ پریس کلبءِ دیمے شُدکَشی احتجاجی کیمپءَ

ایران کیوں بلوچ لیبریشن چارٹر کی مخالفت کرتا هے اور کس طرح بلوچ آزادی پسندوں میں اختلاف اور منشترکو پروان چڑایا

ایران کیوں بلوچ لیبریشن چارٹر کی مخالفت کرتا هے اور کس طرح بلوچ آزادی پسندوں میں اختلاف اور منشترکو پروان چڑایا

بلوچستــان غربـی چگونه اشغال شـــد؟

بلوچستــان غربـی چگونه اشغال شـــد؟

 زبانهای اصیل کوردی، تورکی، تورکمنی، عربی و بلوچی زنده هستند

زبانهای اصیل کوردی، تورکی، تورکمنی، عربی و بلوچی زنده هستند

پاکستان بلوچ اورافغانوں کا مشترکہ دشمن ہے : حیر بیار مری

پاکستان بلوچ اورافغانوں کا مشترکہ دشمن ہے : حیر بیار مری

پاکستانی عدالت ءُ حکومتءَ بلوچ قومءَ هچ دابیں انصاف نہ رسیت – جمیل بگٹی

پاکستانی عدالت ءُ حکومتءَ بلوچ قومءَ هچ دابیں انصاف نہ رسیت – جمیل بگٹی

نمیرانی ءِ کشک شھید نور محمد ءِ نام ءَ

نمیرانی ءِ کشک شھید نور محمد ءِ نام ءَ

استقلال کوردستان مبارک باد

استقلال کوردستان مبارک باد

بلوچ راجءِ میارجلّی ءِ جَوریں تجربه اے

بلوچ راجءِ میارجلّی ءِ جَوریں تجربه اے

نواب مری کو بھی کاہان کوہستان مری لے جانے کے بجائے نیوکاہان کوئٹہ میں اپنے فکری ساتھیوں کے قبرستان میں سپرد خاک کیا جائے۔حیربیار مری

2020-03-31 14:20:38
Share on

نواب مری کی جسدکا بین الاقوامی ماہرین سے معائنہ کرا کر موت کے اسباب معلوم کئے جائیں،
نواب مری کو بھی کاہان کوہستان مری لے جانے کے بجائے نیوکاہان کوئٹہ میں اپنے فکری ساتھیوں کے قبرستان میں سپرد خاک کیا جائے۔حیربیار مری
11جون2014
(ہمگام نیوز)بلوچ قوم دوست رہنما حیربیار مری نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ ہمارے ساتھیوں کا فیصلہ ہے کہ نواب مری کو شہدا قبرستان نیوکاہان کوئٹہ میں سپرد خاک کیا جائے ۔ پاکستانی آرمی نواب مری کی جسد کو کوہستان مری کے کاہان میں لے جانے کی تیاری کر رہا ہے تاکہ وہ نواب مری کے تدفین کے آڑ میں وہاں پر ڈیرہ ڈال کر بلوچوں کے خلاف آپریشن کو مزید تیز کریں انہوں نے کہا کہ پاکستانی آرمی نے کاہان شہر کو گزشتہ دس سالوں میں بمباری کر کے کافی نقصان پہنچایا جس کی وجہ سے کاہان شہر سے لوگوں نے نقل مکانی کی اور اب کاہان تقریبا خالی ہے انہوں نے نہ صرف شہر کو بلکہ ہمارے آباواجداد کے قبرستان کو بھی نقصان پہنچایا ہے، کاہان میں پاکستانی فوج کی چھاونی کو بھی روڈنہ ہونے کی وجہ سے ہیلی کاپٹروں کے زریعے راشن پہنچایا جاتاہیں اب وہ نواب مری کے تدفین کی آڑ میں پاکستان آرمی اپنے لیے راستہ بنانیکی کوشش کرے گا اور ہم نہیں چاہتے کہ ان حالات میں پاکستانی آرمی نواب مری کو کاہان کوہستان مری میں لے جاکر دفن کرے۔ حیربیار مری نے کہا نواب مری گزشتہ جمعے کے روزسے ایک نجی ہسپتال کے آئی سی یو وارڈ میں تھے لیکن انھیں کل آئی سی یو سے نکال کر نارمل وارڈ میں منتقل کیا گیا اور ہمیں یہی کہا گیا کہ اب ان کی طبیعت بہتر ہے لیکن آج ان کی اچانک وفات کی خبر ہمیں دی گئی ، اس سے اس بات کو تقویت مل رہی ہے کہ اس میں پاکستان کی کارستانی کو خارج ازامکان قرار نہیں دیا جاسکتا ہے اس لیے پاکستانی آرمی چاہتی ہے کہ نواب مری کے جسد کو وہ کاہان کوہستان مری میں لے جائیں تاکہ وہاں کوئی بین الاقوامی ماہرنواب مری کی جسد کی معائنہ کرنے کے قابل نہ ہوں۔ ہم چاہتے ہیں کہ انھیں دفن کرنے سے پہلے بین الاقوامی ماہرین سے ان کی موت کے اسباب جان سکیں اس لیے بھی کوئٹہ تدفین کے لیے موزوں ہے۔حیربیار مری نے کہا چونکہ نواب مری کا فکر قومی آزادی تھا اور نیوکاہان کوئٹہ شہدا قبرستان میں جو شہدا دفن ہیں انہوں نے بھی اس قومی فکر اور آزادی کے لیے اپنی جانیں قربان کر دی ہیں، لہذ ا نواب مری کو بھی کاہان کوہستان مری لے جانے کے بجائے نیوکاہان کوئٹہ میں اپنے فکری ساتھیوں کے قبرستان میں سپرد خاک کیا جائے۔

Share on
Previous article

بلوچ نوجوانوں سے اپیل ھے کہ وہ بلوچ رائٹس کے تحت وہ اس ریاستی جرم کے خلاف آواز بلند کریں

NEXT article

انھیں فخر ہے کہ وہ ایک ایسے باپ کے بیٹے ہیں جنھوں نے ساری زندگی غلامی کے سامنے سر جھکانے سے انکار کیا – حیربیار مری

LEAVE A REPLY