نیوکاہان کوئٹہ پاکستانی قابض فورسز کی دہشتگردانہ کاروائیاں جاری150کے قریب افراد اغوا

MUST READ

مـاتی زبان ءِ ميـاں استمانـی روچ

مـاتی زبان ءِ ميـاں استمانـی روچ

واھگ منی جِندے نہ انت ، تو مُرواریدین ارسان مگوار

واھگ منی جِندے نہ انت ، تو مُرواریدین ارسان مگوار

حقیقت کچھ اور ہے رند رگام بلوچ

حقیقت کچھ اور ہے رند رگام بلوچ

هر کار په بود ءُ هِمّت انت

هر کار په بود ءُ هِمّت انت

بحـران بـرق در بلوچستـان اشغالـی

بحـران بـرق در بلوچستـان اشغالـی

نامه محمد صابر ملک رئیسی پس از برخورد های تبعیض آمیز دوباره

نامه محمد صابر ملک رئیسی پس از برخورد های تبعیض آمیز دوباره

شهید واجہ صبا دشتیاریءِ ترانے 12 مئی 2011 کوئٹہ پریس کلبءِ دیما

شهید واجہ صبا دشتیاریءِ ترانے 12 مئی 2011 کوئٹہ پریس کلبءِ دیما

بلوچستان میں خواتین کی جبری گمشدگی وہلاکت افسوسناک و قابلِ مذمت ہیں:بی ایچ آر او

بلوچستان میں خواتین کی جبری گمشدگی وہلاکت افسوسناک و قابلِ مذمت ہیں:بی ایچ آر او

درماندگی فاشیسم تمامیت خواه پارس

درماندگی فاشیسم تمامیت خواه پارس

پدا مئے بچ بالاچ انت – طلاءُ سنجگءُ ساچین – بشیربیدار

پدا مئے بچ بالاچ انت – طلاءُ سنجگءُ ساچین – بشیربیدار

روز شهــدای بلوچستـان گرامـی باد

روز شهــدای بلوچستـان گرامـی باد

راهی بجز دفاع از موجودیت ملی و آزادی بلوچستــان باقی نمانده است

راهی بجز دفاع از موجودیت ملی و آزادی بلوچستــان باقی نمانده است

اوجگیری جنبش استقلال طلبانه بلوچستـان و سبعیت ارتش پاکستان

اوجگیری جنبش استقلال طلبانه بلوچستـان و سبعیت ارتش پاکستان

بلوچستان ءِ راجی جنزءِ دیمپان چے اَنت؟

بلوچستان ءِ راجی جنزءِ دیمپان چے اَنت؟

بلوچ نوجوانوں سے اپیل ھے کہ وہ بلوچ رائٹس کے تحت وہ اس ریاستی جرم کے خلاف آواز بلند کریں

بلوچ نوجوانوں سے اپیل ھے کہ وہ بلوچ رائٹس کے تحت وہ اس ریاستی جرم کے خلاف آواز بلند کریں

نیوکاہان کوئٹہ پاکستانی قابض فورسز کی دہشتگردانہ کاروائیاں جاری150کے قریب افراد اغوا

2020-03-26 15:22:54
Share on

کوئٹہ (مقبوضہ بلوچستان، بی یو سی نیوذ)نیوکاہان کوئٹہ فلسطینی خونزیر علاقہ غزہ پٹی کا منظر پیش کررہا ہے مسلسل پانچویں روز پاکستانی قابض فورسزنے وحشیانہ کاروائیاں جاری رکھتے ہوئے ڈیڑھ سو کے قریب افراد کو گرفتارکرکے اپنے ساتھ لے گئے چار لاکھ روپے نقد اور لاکھوں روپوں کے قیمتی اشیاء لوٹ لئے گئے چھ گھنٹوں تک جاری رہنے والی کاروائی میں نیوکاہان کوئٹہ کے چھپے چھپے چھانے گئے کہیں سے کوئی غیر قانونی چیز برآمد نہ ہوسکی علاقہ خالی کردیں ورنہ ہلاکت اور گرفتاریوں کیلئے تیار رہیں فورسز کی علاقہ مکینوں کی دھمکیاں بلوچ نیشنل وائس کے جاری کردہ بیان میں کہاگیا کہ اتوار کی علی الصبح4بجے کے قریب 60سے زائد گاڑیوں میں سوار ایف سی ،پولیس اور انٹیلی جنس اداروں کے اہلکار نیوکاہان کوئٹہ میں داخل ہوئے اور فورسز نے نیوکاہان کوئٹہ میں داخل ہوتے ہی شدید ترین فائرنگ کرکے پورے علاقے کو دہشت زدہ کی فورسز نے پورے علاقے کے چاروں اطراف سے گھیرے میں لینے کے بعد طلوع آفتاب سے قبل گھرگھر تلاشی مہم کا آغاز کردیا چار بجے سے لیکر دس بجے تک چھ گھنٹوں میں جاری رہنے والی وحشیانہ کاروائی اور تلاشی مہم کے دوران نیوکاہان کوئٹہ کے خاک چھاننے کے باوجود قابض فورسز کو کہیں پر بھی ذرا برابر کوئی غیر قانونی چیز ہاتھ نہیں آیا دورا ن کاروائی مختلف گھروں سے چار لاکھ روپے نقدی، درجن بھر موٹرسائیکلیں،سائیکل،موبائل فونز،کمبل سمیت لاکھوں روپوں کے قیمی و گھریلو اشیاء لوٹ لئے گئے خونریز کاروائی کے دوران بلوچ گھرانوں کے چادر و چاردیواری کے تقدس کو بری طرح پامال کرتے ہوئے بے لگام فورسز بغیر لیڈیز پولیس کے گھروں میں داخل ہوئے اور ایک مقام پر فورسز کے اہلکاروں کو دیکھ کر جب ایک شیر خوار بچے نے چلایا تو ایف سی کے ایک آفیسر نے اپنے پستول کا رخ بچے کی طرف موڑتے ہوئے دھمکی دی کہ بچے کو چھپ کروائیں ورنہ ایک منٹ میں بچے کو والدہ سمیت شوٹ کردونگا مجھ سے پوچھنے والا کوئی نہیں اور میں ہر کسی کو شوٹ کرنے کا پورا پورا اختیار رکھتا ہوں ایف سی کے مذکورہ آفیسر نے مختلف گھروں نے موجود خواتین و بچوں کو دھمکی دی کہ فی الفور نیوکاہان کوئٹہ خالی کردیں وگرنہ روزانہ چھاپوں،اغواء اور ہلاکتوں کیلئے تیار رہیں یاد رہے کہ اتوار کو نیوکاہان کوئٹہ میں کی گئی کاروئی گزشتہ پانچ روز سے جاری ملٹری آپریشن کا تسلسل ہے ا پاکستانی دہشت گرد فورسز نے بلوچوں کے خلاف ظلم وجبر میں اسرائیلی صیہونی ریاست کی تاریخ کو بھی مات دے دی کیونکہ اسرائیلی فورسز بھی صرف اس وقت فلسطینی بے گناہ لوگوں پر بمباری کرتی ہے جب ان پر کوئی راکٹ حملہ ہوتا ہے مگر پاکستانی دہشت گرد فورسز گزشتہ پانچ دنوں سے نیوکاہان کوئٹہ میں بغیر کسی جواز اور عسکری کاروائی کے خونریز کاروائی کرکے اسرائیل سمیت دنیا بھر کے ظالم،جابر اور قابضین کی تاریخ کو پیچھے چھوڑ دیا ہے نیوکاہان کوئٹہ جنرل مشرف کے فوجی دور سے لیکر آجتک مسلسل پاکستانی فورسز کے زیرعتاب رہی ہے یہاں کے سینکڑوں باشندے پاکستانی فورسز کے ہاتھ اغواء ہونے کے بعد ابتک لاپتہ ہیں درجن بھر رہائشیوں کی مسخ شدہ لاشیں پھینکی جاچکی ہیں اور خواتین و بچوں سمیت کئی درجن افراد مختلف مواقعوں میں پاکستانی فورسز کے فائرنگ سے ہلاک و زخمی ہوئے ہیں بلوچ نیشنل وائس نے کوئٹہ شہر کے نواح میں بلوچ آبادیوں کے خلاف گزشتہ تین روز سے جاری ریاستی کاروائیوں پر پاکستانی الیکٹرانک میڈیا کی مسلسل خاموشی پر انہیں شدید تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ الیکٹرانک میڈیا بھی پاکستانی اداروں کے ہاتھوں یرغمال ہے آزاد اور غیر جابندار میڈیا کا دعویٰ صرف پنجاب کی حد تک تو درست ہوسکتا ہے کیونکہ وہاں کسی چیونٹی کی ٹانگ ٹوٹ جاتی ہے تو اسے بھی پاکستانی الیکٹرانک میڈیا بریکنگ نیوز اور اینکرپرسن موضوع بحث بنالیتے ہیں مگر کوئٹہ شہر میں واقع بلوچوں کی آبادی پر مسلسل تین روز سے جاری وحشیانہ کاروائیاں،آپریشن کے دوران شدید ترین فائرنگ ،چھ چھ گھنٹوں تک ہزاروں کی تعداد میں فورسز کا علاقے میں یلغار اور سینکڑوں لوگوں کے اغواء کی خبر پاکستانی الیکٹرانک میڈیا کیلئے کوئی حیثیت نہیں رکھتی بیان میں اقوام متحدہ،ایمنسٹی انٹرنیشنل،ہیومن رائٹس واچ ،ایشین ہیومن رائٹس کمیشن سمیت انسانی حقوق کے عالمی اداروں پر زور دیا گیا کہ وہ پاکستانی قابض ریاست کی بلوچ کش کاروائیوں کا فی الفور نوٹس لیتے ہوئے بلوچ قومی آزادی کیلئے جاری بلوچ جدوجہد کی سیاسی ،اخلاقی و سفارتی حمایت کریں۔

Share on
Previous article

گپ وتران گون شہید محمد اکبر خان بگٹی ء 20060402 گون ریڈیو بلوچی ایف ایم

NEXT article

نہ چاہتے ہوئے بھی – کردگار بلوچ

LEAVE A REPLY