وطن واپسی کے افواہ پاکستان کے گھڑے گئے جھوٹ ہیں – قریبی ذرائع خان قلات

وطن واپسی کے افواہ پاکستان کے گھڑے گئے جھوٹ ہیں – قریبی ذرائع خان قلات

2020-03-31 11:29:07
Share on

لندن / اطلاعات کے مطابق خان قلات سلیمان داود نے وطن واپسی اور پاکستان سے کسی بھی ممکنہ ڈیل کے خبروں کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے خبروں میں کوئ صداقت نہیں خان قلات کے قریبی حلقوں سے معلوم ہوا ہے کہ خان قلات سلیمان داود نے میڈیا میں اسکی وضاحت کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ اخبارات اور پارلیمنٹ اس غیر فطری ریاست کے اپنے ہیں وہ ان سے نام نہاد بِل پاس کرائیں یا جھوٹی خبریں دیں انہیں کوئ نہیں روک سکتا ، بار بار ایسے افواہوں اور جھوٹ کے پلندوں کا جواب دینا میں مناسب نہیں سمجھتا ، پاکستان کی بنیاد جھوٹ ہے اس لیئے صرف جھوٹ پر چل رہی ہے یہ وہی ملک ہے جو 10 سالوں تک دنیا سے کہتی رہی کہ اسے اسامہ بن لادن کا کوئی اتا پتہ معلوم نہیں لیکن آخر میں اسامہ اسکے چھاونیوں کے بغل سے سامنے آگیا ، ایسے ملک کے افواہوں پر کان دھرنا یا اس کے ہر جھوٹ کا جواب دینا بالکل ضروری نہیں پاکستان کی اصلیت ہر کوئ جانتا ہے ، اس طرح پاکستان ہر روز ایک جھوٹ گڑھ کر اپنے نام نہاد میڈیا میں جاری کردے تو کیا میں روزانہ اس کے جھوٹوں کا جواب دوں اور صفائیاں دیتا پھروں ، اس لیئے میں اسے اہمیت ہی نہیں دیتا ہوں اور قوم کو بھی ایسے افواہوں پر کان نہیں دھرنا چاہئے ، خان کے قریبی حلقوں کے مطابق محمود خان اچکزئی سے ملاقات پر انہوں نے تبصرہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ محمود خان اچکزئی کسی بات کو بیچ میں لائے بغیر صرف ایک دوستانہ ملاقات کرنا چاہتا تھا ، اب اگر وہ یا کوئی اور اس ملاقات کو کوئی اور رنگ دینا چاہتا ہے تو یہ محض خام خیالی ہوگی ، بلوچستان کے متعلق میرا موقف واضح ہے نا میں اس حوالے سے کوئ ڈِیل کروں گا اور نا ہی یہ میری خواہش ہے ۔

khan kalat

Share on
Previous article

بلوچی زبانءِ شاعرءُ قلمکار هدامرزی واجه عبدالرحمان پهوالءِ شعرے اوغانستانءَ طالبانی حکومتءِ دورءَ

NEXT article

جئے سندھ متحدہ محاذ کے کارکن شهید سرویچ پیرزادہ کے والد لطف علی سے گفتگو

LEAVE A REPLY

MUST READ

سفارت کاری ، بلوچ تحریک کی اہم ضرورت – کریمہ بلوچ

سفارت کاری ، بلوچ تحریک کی اہم ضرورت – کریمہ بلوچ

بلوج ریاستی پروپیگنڈه هانی بهر مہ بنت، بلوچ لبریشن آرمیءِ باسکانی شیهد ءُ دستگرکنگ حکومتی پروپیگنڈه ایت

بلوج ریاستی پروپیگنڈه هانی بهر مہ بنت، بلوچ لبریشن آرمیءِ باسکانی شیهد ءُ دستگرکنگ حکومتی پروپیگنڈه ایت

شعار” آزاد بلوچستان” در بلوچستان اشغالی طنین افکن شد

شعار” آزاد بلوچستان” در بلوچستان اشغالی طنین افکن شد

چرا کمبود آب “مسئله امنیتی” شــد؟

چرا کمبود آب “مسئله امنیتی” شــد؟

پرچے ناشریں ڈنّی یاں مئے مَچکَدَگاں ماندارَگ اَنت؟

پرچے ناشریں ڈنّی یاں مئے مَچکَدَگاں ماندارَگ اَنت؟

کیچ مکران دشتءَ پاکستانی فوجی آپریشن – ریڈیو حال

کیچ مکران دشتءَ پاکستانی فوجی آپریشن – ریڈیو حال

جنون کودک کشی اشغالگران در بلوچستان

جنون کودک کشی اشغالگران در بلوچستان

مروچی 30 اگست 2013ءَ بیگواہ بوتگین مردومانی میان استمانی روچءِ درگتءَ وائس فار بلوچ میسنگ پرسنانی سروک واجہ قدیر بلوچءِکلوه پا بلوچ راجءَ

مروچی 30 اگست 2013ءَ بیگواہ بوتگین مردومانی میان استمانی روچءِ درگتءَ وائس فار بلوچ میسنگ پرسنانی سروک واجہ قدیر بلوچءِکلوه پا بلوچ راجءَ

ماتی زبان – گوس بھاربلوچ

ماتی زبان – گوس بھاربلوچ

مشکے میں فوجی آپریشن

مشکے میں فوجی آپریشن

اقراء ریزیڈنشل اسکول اینڈ کالج مری میں تشدد شدہ بلوچ طالبعلم سے گفتگو

اقراء ریزیڈنشل اسکول اینڈ کالج مری میں تشدد شدہ بلوچ طالبعلم سے گفتگو

پاکستان جہادی کلچر ودہشت گردی کا مرکز و فیکٹری ہے : حیربیار

پاکستان جہادی کلچر ودہشت گردی کا مرکز و فیکٹری ہے : حیربیار

پدا مئے بچ بالاچ انت – طلاءُ سنجگءُ ساچین – بشیربیدار

پدا مئے بچ بالاچ انت – طلاءُ سنجگءُ ساچین – بشیربیدار

بلوچستان میں پاکستان انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کررها هے ۔ بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج

بلوچستان میں پاکستان انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کررها هے ۔ بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج

شہید شاہینہ کے قتل سے نا صرف اس کی والدہ اور بہنیں اب بے سہارا ہو گئی ہیں بلکہ بلوچستان اور خاص کر کیچ مکران ایک روایت ساز دلیر بیٹی سے بھی محروم ہو گیا ہے

شہید شاہینہ کے قتل سے نا صرف اس کی والدہ اور بہنیں اب بے سہارا ہو گئی ہیں بلکہ بلوچستان اور خاص کر کیچ مکران ایک روایت ساز دلیر بیٹی سے بھی محروم ہو گیا ہے